Saturday, June 22

برطانوی ہائی کمشنر کی جانب سے شیوننگ اور کامن ویلتھ سکالرز کااستقبال

British High Commissioner to Pakistan Jane Marriott welcomes back Chevening and Commonwealth scholars. Having completed their postgraduate studies in the UK, the 2022-2023 of 47 Chevening Scholars and 46 Commonwealth Scholars have had the opportunity to renew and maintain relationships that will Stick with them for the rest of your life. The 2022-23 cohort comes from across Pakistan, with all provinces represented. All scholars benefit from fully-funded scholarships to study a range of subjects, including development, public health, climate change and business, at leading universities Top ones include Oxford University and the London School of Economics. They will now join a group of distinguished alumni from a variety of fields.These include the first female judge of the Gilgit-Baltistan High Court, Amna Zamir Shah, prominent disability activist Abia Akram, and the first female lawyer of the Hazara minority, Jalila Haider. British High Commissioner to Pakistan, Jane Marriott CMG OBE, said: "Our Chevening and Commonwealth Scholarships stand at the pinnacle of UK education provision for Pakistanis. These students These returning audiences not only receive an education from the world's best universities, they also expand their professional networks and experience life in the UK. They take it with them as a return to their respective careers and fields." Aurangzeb Kasi, a scholar from Balochistan, said: “Chevening was a transformative experience that enriched me both academically and literary chemistry.I look forward to using the global perspective I have gained to create positive change in my community. , applications for Commonwealth Scholarships will open in September 2024. To find out more, visit the CSC website. Applications for Chevening Scholarships will open in August 2024. Interested applicants can sign up to receive notifications by visiting www.chevening.org. THE PAKISTAN TIMES

برطانوی ہائی کمشنر کی جانب سے شیوننگ اور کامن ویلتھ سکالرز کااستقبال

اسلام آباد- پاکستان میں برطانوی ہائی کمشنر جین میریٹ نے واپس آنے والے شیوننگ اور کامن ویلتھ سکالرز کا خیرمقدم کیا ہے۔UK  پوسٹ گریجویٹ تعلیم مکمل کرنے کے بعد، شیونگ کے47 اور کامن ویلتھ46 اسکالرز پر مشتمل 2022-23 کے کوہورٹ کو تعلقات کو فروغ دینے کا موقع ملا جو زندگی بھر ان کے ساتھ رہیں گے۔2022-23 کے گروپس پورے پاکستان سے آئے تھے، جن میں تمام صوبوں کی نمائندگی شامل تھی۔تمام اسکالرز نے آکسفورڈ یونیورسٹی اور لندن سکول آف اکنامکس جیسی معروف یونیورسٹیوں میں ترقی، صحت عامہ، موسمیاتی تبدیلی اور کاروبار سمیت متعدد مضامین کا مطالعہ کرنے کے لیے مکمل فنڈڈ وظائف سے فائدہ اٹھایا۔اب وہ متنوع شعبوں سے تعلق رکھنے والے ہائی پروفائل سابق طلباء کے ایک گروپ میں شامل ہوں گے۔ اس میں گلگت بلتستان ہائی کورٹ کی پہلی خاتون جج آمنہ ضمیر شاہ، ممتاز معذور کارکن عبیہ اکرم اور ہزارہ اقلیت سے تعلق رکھنے والی پہلی خاتون وکیل جلیلہ حیدر شامل ہیں۔پاکستان میں برطانوی ہائی کمشنر جین میریٹ سی ایم جی او بی ای نے اس حوالے سےبات کرتے ہوے کہا کہ ہمارے شیوننگ اور کامن ویلتھ اسکالرشپس پاکستانیوں کے لیے برطانیہ کی تعلیمی پیشکش میں سرفہرست ہیں۔ ان واپس آنے والے اسکالرز نے نہ صرف دنیا کی بہترین یونیورسٹیوں میں تعلیم حاصل کی ہے، بلکہ اپنے پیشہ وارانہ نیٹ ورکس اور برطانیہ میں تجربہ کار زندگی کو بھی بڑھایا ہے۔ وہ اسے اپنے اپنے کیریئر اور شعبوں میں واپسی کے طور پر اپنے ساتھ لے جاتے ہیں۔بلوچستان کے ایک سکالر اورنگزیب کاسی نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوے کہا کہ چیوننگ ایک تبدیلی کا تجربہ تھا، جس نے مجھے علمی اور ثقافتی دونوں لحاظ سے لیس کیا ۔ میں اپنی کمیونٹی میں مثبت تبدیلی لانے کے لیے حاصل کیے گئے عالمی تناظر کو استعمال کرنے کااب مزید انتظار نہیں کرونگا ۔واضح رہے اگلے کامن ویلتھ اسکالرشپس کے لیے درخواستیں ستمبر 2024 میں طلب کی جایں گی ۔

Sub Editor : Arslan